Love Poetry|Urdu Poetry About Love|Urdu Poetry For Love

love poetry





وہ تیرا ذکر ہی تو ہوتا ہے
ہوں جہاں بھی گلاب کی باتیں
Wo Tera Zikr Hi Tou Hota Hai
Yhoon Jhaan Bhe Gulab Ki Batein


تم باغ میں بھی آیا کرو
پھول اوقات میں رہیں گے
Tum Baagh Mein Bhe Aya Karo
Phol Oqat Mein Rehen Ge


‏دیکھا تمھارا عکس جب اپنے  وجود  میں 
‏ایسا  میں اپنے آپ کو اچھا  لگا کہ بس 
Dekha Tumhara Aks Jab Apne Wajod Mein
Aisa Main Apne Aap Ko Acha Lga K Bas


تیرے کمرے کے آئینے کو
دشمنوں میں شمار کرتے ہیں
Tere Kamry K Aainy Ko
Dushmanon Mein Shumar Karty Hain


گھر  سجانے  کا  کام  باقی  ہے 
اپنی  تصویر  کیوں  نہیں  دیتی
Ghr Sajany Ka Kam Baqi Hai
Apni Tasveer Kioun Nhi Deti


اتنا ہی بہت ہے میرے لیئےمحترمہ
کہ، تم خواب میں آکر سینے سے لگ جاتی ہو
Itna Hi Boht Hai Mere Liye Mohtarma
K,Tum Khawab Mein Aa Kar Ceny Se Lag Jati Ho


یعنی اب لوگ سکھائیں گے, کہ کیسے دیکھوں
میری مرضی, میں اُس شخص کو جیسے دیکھوں
Yeni Ab Log Sekhaein Ge,K Keasy Dekhun
Meri Marzi , Main ShakHS Ko Jeasy Dekhun


اس کی بھی ہمت ہے
جو میرے نام کے طعنے برداشت کرتی ہے
Is ki Bhe Himat Hai
Jo Mere Naam K Tany Bardasht Karti Hai


ٹھیک ہے ! دید تو تصویر سے بھی ممکن ہے 
روبرو ،  آپ کے دیدار کی خواہش لیکن
Theek Hai Deed To Tasveer Se Bhe Mumkin Hai
Ro Baro Aap K Deedar Ki Khawaish Lekin



‏هم کیا کریں ....... اگر نہ تیری آرزو کریں 
‏دنیا میں اور بھی کوئی تیرے سوا هے کیا
Hum Kya Karen ...... Agr Na Teri Arzoo Karen
Duniya Mein Aur Bhe Koi Tere Sewa Hai Kya


هو  سکتی نہیں جس کی کوئی بات علیحدہ
اس شخص سے اب کیسے کریں ذات علیحدہ
Ho Sakti Nahi Jis Ki Koi Baat Elaida
Us Shaks Se Ab Keasy Karen Zaat Elaida


تیرا دیکھنا قتل کی
 کوششوں میں شمار ہوتا ہے
Tera Dekhna Qatal Ki
Koshishon Mein Shumar Hota Hai


دھڑکنیں بے قابو ہو جاتی ہیں
و ہ اِک نظر جب اٹھا کردیکھیں
Dharkany Be Qabon Ho Jati Hain
Wo Eik Nazar Jab Utha Kar Dekhen


نہ چھوڑا تم نے ہم کو دیکھنا اور دیکھ لو ہم 
تمہارے دیکھتے رہنے سے سندر ہو گئے ہیں
Na Chora Tum Ne Hum Ko Dekhna Aur Dekh Lo Hum
Tumhary Dekhty Rehny Se Sundar Ho Ge Hain


وہی تیرے دیرینہ خادم ہیں ہم

کوئی حکم فرما، کچھ ارشاد کر

Wohi Tere Dareyna Khadim Hain Hum
Koi Hukm Farma,Kuch Irshad Kar


میسر کر دے جو صدیوں کی قربتیں

سنگ تیرے وہ اک لمحہ جینا چاہوں

Muyasar Kar De Sadiyon Ki Qurbaten

Sang Tere Wo Eik Lamha Jeena Chaun



‏وہ ہمیں سب کچھ کہہ کر کہتے ہیں!

جی ہم آپ کو کہہ ہی کیا سکتے ہیں

Wo Humen Sab Kuch Keh Ka Kehty Hain

Ji Hum Aap Ko Keh Hi Kya Sakty Hain



ہاتھ پکڑا تو کہنے لگی

چھوڑو چوڑیاں نازک ہیں

Hath Pakra Tou Kehny Lagi

Choro Churiyaan Nazuk Hain



ہم نفرت بھی کرتے ہیں آپ سے

مگر محترمہ تھوڑی توجہ تو کیجئے

Hum Nafrat Bhe Karty Hain Aap Se

Magar Mohtarma Thri Tawaju To Kijiye



تیری زُلفِ دراز ہے جب تک 
کون پیڑوں کی چھاؤں کو ترسے
Teri Zulf e Daraz Hai Jab Tak
Kon Peron Ki Chaon Ko Tarsy


ادا و ناز، چشمِ شوخئ، اور گیسوئے پُر خم
انہی غارت گروں نے مل کر بستی لوٹ لی دل کی
Ad'da o Naaz,Chashm e Shokhi,Aur Gesoy e Pur Kham
Inhi Gaarat Garon Ne Mil Kar Basti Loot Li Dil Ki

Post a comment

0 Comments